بچوں کو نہ پڑھنے کا الزام نہیں دیا جا سکتا ،نثار احمد کھوڑو،
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
پیر فروری

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 23/02/2015 - 21:59:26 وقت اشاعت: 23/02/2015 - 21:59:26 وقت اشاعت: 23/02/2015 - 21:58:18 وقت اشاعت: 23/02/2015 - 21:58:18 وقت اشاعت: 23/02/2015 - 21:39:13 وقت اشاعت: 23/02/2015 - 21:39:13 وقت اشاعت: 23/02/2015 - 21:39:13 وقت اشاعت: 23/02/2015 - 21:36:00 وقت اشاعت: 23/02/2015 - 21:36:00 وقت اشاعت: 23/02/2015 - 21:36:00 وقت اشاعت: 23/02/2015 - 21:18:40
پچھلی خبریں - مزید خبریں

کراچی

بچوں کو نہ پڑھنے کا الزام نہیں دیا جا سکتا ،نثار احمد کھوڑو،

ذمہ دار وہ لوگ ہیں جو انہیں پڑھاتے ہیں، اساتذہ کی قابلیت اور کارکردگی کا جائزہ لینے کیلئے ٹیچر اویلیوایشن سسٹم وضع کیا ہے، آئندہ مارچ سے نظر ثانی شدہ نصاب کے مطابق طلبہ میں کتابیں تقسیم کی جائیں گی ،سینئر صوبائی وزیر سندھ

کراچی (اردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار 23 فروری 2015ء ) سندھ کے سینئر وزیر برائے تعلیم و خواندگی نثار احمد کھوڑو نے کہا ہے کہ بچوں کو یہ الزام نہیں دیا جا سکتا کہ وہ پڑھتے نہیں ہیں بلکہ ذمہ دار وہ لوگ ہیں، جو انہیں پڑھاتے ہیں ۔ ہم نے اساتذہ کی قابلیت اور کارکردگی کا جائزہ لینے کے لیے ٹیچر اویلیوایشن سسٹم وضع کیا ہے ۔ آئندہ مارچ سے نظر ثانی شدہ نصاب کے مطابق طلبہ میں کتابیں تقسیم کی جائیں گی ۔

وہ پیر کو سندھ اسمبلی کے اجلاس میں وقفہ سوالات کے دوران متعدد ارکان کے تحریری اور ضمنی سوالوں کے جوابات دے رہے تھے ۔ سینئر وزیر تعلیم نے بتایا کہ سندھ میں کل 269 کالجز ہیں ، ان میں سائنس ، آرٹس ، کامرس ، ہوم اکنامکس ، فزیکل ایجوکیشن اور ایجوکیشن کالجز شامل ہیں ۔ صرف کراچی میں 131 کالجز اور حیدر آباد میں 20 کالجز ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ نئے کالجز کا قیام ہماری ترجیح ہے ۔

صوبے میں 43 ہزار پرائمری اسکولز ، جو کل تعلیمی اداروں کا 90 فیصد ہیں ۔ باقی 10 فیصد ایلیمینٹری ، سیکنڈری اور ہائر سیکنڈری اسکولز اور کالجز ہیں ۔ اس لیے اعلیٰ تعلیمی اداروں کا قیام ضروری ہے ۔ انہوں نے کہاکہ بجلی والے ادارے سندھ حکومت کے ساتھ بجلی کے بلز کا تنازعہ طے نہیں کرتے اور تعلیمی اداروں سمیت دیگر سرکاری عمارتوں کی بجلی کاٹ دیتے ہیں ۔

اسی طرح گیس کے ادارے بھی وہاں گیس فراہم نہیں کرتے ، جہاں گیس نکلتی ہے ۔ ہم کوشش کریں گے کہ کالجز میں بجلی اور گیس کے مسائل حل کریں ۔ انہوں نے کہا کہ کالجز میں اس وقت 341410 طلباء ہیں ۔ ان میں سے ایک لاکھ 46 ہزار سے زائد طالبات ہیں ۔ ایک سوال کے تحریری جواب میں سینئر وزیر تعلیم نے بتایا کہ سندھ میں نقل کے رجحان کو روکنے کے لیے کئی اقدامات کیے گئے ہیں ۔

کئی عشروں سے جاری نقل کی لعنت کے تدارک کے لیے ثانوی اور اعلیٰ ثانوی امتحانات میں سوالات کا نیا انداز اختیار کیا گیا ہے ۔ پرچوں کو خفیہ رکھنے کو یقینی بنایا گیا ہے ۔ امتحانی مواد کی تقسیم اور واپس جمع کرنے کے نظام کو بہتر بنایا گیا ہے ۔ کمپیوٹرائزڈ انرولمنٹ اور رجسٹریشن کارڈ جاری کیے جا رہے ہیں ۔ امتحانی مراکز کی مانیٹرنگ کی جاتی ہے اور دیگر اقدامات بھی کیے گئے ہیں ۔

سینئر وزیرتعلیم نے بتایا کہ تعلقہ صالح بٹ کے گورنمنٹ پرائمری اسکول خبری بھٹ میں نلکے کا پانی پینے

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

23/02/2015 - 21:39:13 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان