بند کریں
جمعرات جنوری

مزید تٰعلیمی مضامین

پچھلے مضامین - مزید مضامین
دیہی علاقوں کے طلبہ وطالبات کی نمایاں پوزیشن
ہر سال کی طرح اس سال بھی متوسط گھرانوں کے ذہین طلبہ وطالبات نے میٹرک بورڈ کے امتحانات میں نمایاں پوزیشن حاصل کر کے سب کو ورطہ حیرت میں ڈال دیاکیونکہ ان میں سے اکثریت ایسے بچوں کی ہے جو بنیادی سہولتوں سے محروم ہیں
مظہر حسین شیخ:
طالب علم کی قابلیت میٹرک میں حاصل کئے گئے نمبروں سے عیاں ہوجاتی ہے میٹرک کی تعلیم بنیادی تصور کی جاتی ہے اور پھر یہیں سے تعلیمی میدان کی طرف تمام راہیں کھلتی ہیں۔ وقت گزرنے کے ساتھ ساتھ طلبہ و طالبات بازی لے رہے ہیں ہر طالب علم ایک دوسرے پر سبقت حاصل کرنے کی کوشش کرتا ہے جبکہ خوب محنت کرنے والے نمایاں کامیابی سے ہمکنار ہوتے ہیں۔
قوم کے بچوں اور بچیوں نے میٹرک کے نتائج میں جس طرز پر نمایاں کامیابیاں حاصل کی ہیں وہ نہ صرف ملک و ملت کے لئے سرمایہ افتخار اور سربلندی کی حیثیت رکھتی ہیں بلکہ نہایت اطمینان بخش بھی ہیں۔ہر سال کی طرح اس سال بھی متوسط گھرانوں کے ذہین طلبہ وطالبات نے میٹرک بورڈ کے امتحانات میں نمایاں پوزیشن حاصل کر کے سب کو ورطہ حیرت میں ڈال دیاکیونکہ ان میں سے اکثریت ایسے بچوں کی ہے جو بنیادی سہولتوں سے محروم ہیں اور ان میں سے اکثریت کا تعلق دیہی علاقوں سے ہے گویا لوڈ شیڈنگ کے باوجوداْنہوں نے اچھی اور نمایاں پوزیشن حاصل کی۔
انہیں میٹرک بورڈ کے امتحانات کی تیاری کے لئے دقت توضرور پیش آئی ہو گی لیکن اس میں کوئی شک نہیں کہ پاک وطن کے بچے اپنی ذہنی صلاحیتوں سے مالا مال ہیں ایسے بچے جن کو بنیادی سہولتیں بھی میسر نہیں انہوں نے اپنی ذہانت کا لوہا منوایا یہ بات نہایت فخر کے ساتھ کہی جا سکتی ہے کہ غربت نے امارت کو شکست دے دی۔ دولت مند گھرانوں کے بچے اور بچیاں جن کے پاس دولت اور وسائل کی کوئی کمی نہیں اعلیٰ سے اعلیٰ سکول، اچھی سے اچھی اکیڈمیاں، بہتر سے بہترین اساتذہ ان کی دسترس میں ہیں مگر شوق، رجحان اور ذہنی صلاحیتوں نے دولت کو شکست دے کر یہ ثابت کر دیا کہ آگے بڑھنے کے جذبہ کے سامنے دولت ایک حقیر چیز ہے حکومت وقت ان تمام بچوں اور بچیوں پر خصوصی توجہ دے اور آنے والے وقتوں میں ان تمام بچے اور بچیوں میں شوق اور جذبہ برقراررہنا چاہئے وہ امیر گھرانوں سے تعلق رکھتے ہیں یا غریب گھرانوں سے۔
یہ شوق اور جذبہ یقیناً ملک و قوم کی ترقی اور خوشحالی میں نہایت اہم کردار ادا کرے گا۔ تعلیمی میدان میں نمایاں پوزیشن حاصل کرکے طالب علموں نے اپنے والدین اور اساتذہ کا سر فخر سے بلند کر دیا ہے۔ طلبا و طالبات ہمارے ملک کا قیمتی اثاثہ ہیں ہمارے ملک میں ٹیلنٹ کی کمی نہیں۔ باصلاحیت اور ذہین بچوں کی بھرپور حوصلہ افزائی کی جائے اور ان کی ہرضرورت کا خاص خیال رکھا جائے۔
اس دوران ان کا سر فخر سے بلند ہو گیاجنہوں نے اپنے جگر گوشوں کو پڑھانے کے لئے کوئی کسر نہ چھوڑی آخر کار ان کی محنت رنگ لائی اور انہیں یہ دن دیکھنا نصیب ہوا۔تعلیم کسی بھی ملک کا بنیادی اور اہم ترین شعبہ ہے جس کے باعث قومیں آگے بڑھتی اور ملک کی ترقی و خوشحالی کا باعث بنتی ہیں۔ حکومت کو چاہئے کہ وہ تعلیم کے اس شعبے پر پوری اور بھرپور توجہ دے۔
عام تعلیم کے ساتھ ساتھ فنی تعلیم کے فروغ کیلئے بھی ضروری اقدامات کرے اس لئے کہ فنی تعلیم ہماری صنعتی ترقی کیلئے بے حد لازم اور ضروری ہے۔میٹرک بورڈ کے امتحانات میں کامیاب امیدواروں کی خوشی کا جہاں کوئی ٹھکانہ نہ تھا وہاں ناکام ہونے والے طلبہ و طالبات میں مایوسی کی لہر دوڑ گئی ، مایوسی گناہ ہے ایسے طلبہ و طالبات ہمت نہ ہاریں بلکہ خوب محنت کرکے دکھائیں۔
چند ماہ کی محنت ایسے طالب علموں کی تقدیر بدل سکتی ہے۔
ارادے جن کے پختہ ہوں نظر جن کی خدا پہ ہو
تلاطم خیز موجوں سے وہ گھبرایا نہیں کرتے
حال ہی میں لاہور بورڈ آف انٹر میڈیٹ اینڈ سیکنڈری ایجوکیشن کے میٹرک کے سالانہ امتحان کے نتائج کا اعلان ہوا پوزیشن ہولڈرز نے اپنی کامیابی کو اللہ تعالیٰ کی خاص رحمت قرار دیتے ہوئے مستقبل میں ملک و قوم کی بھرپور خدمت کا عزم کیا۔
اور کہا کہ ان کی کامیابی والدین کی دعاوٴں کیساتھ ساتھ اساتذہ کی محنت کا نتیجہ ہے طالب علموں نے کہا کہ وہ مستقبل میں مزید کامیابیاں حاصل کر کے ملک و قوم کا نام روشن کریں گے۔ امتحان میں پہلی پوزیشن حاصل کرنیوالی طالبہ شفق زاہد نے کہا کہ کامیابی ٹیچرز کی محنت کا ثمر ہے، وہ ڈاکٹر بن کر دکھی انسانوں کی خد مت کرنا چاہتی ہیں ۔ دوسری پوزیشن حاصل کر نیوالی طالبہ علینہ محسن کا کہنا ہے کہ انسان کا ہر مقصد محنت سے پورا ہو سکتا ہے۔
تیسری پوزیشن حاصل کرنے والی ارہ عابد، عائشہ نور اور محمد امتنان فضل نے کہا کہ مستقبل میں ڈاکٹریاانجنئیر بن کر ملک و قوم کی خدمت کریں گے۔وہ اپنی کامیابی پر اللہ تعالیٰ کے شکر گزار ہیں۔ لاہور بورڈ آف انٹرمیڈیٹ سمیت پنجاب بھر کے تعلیمی بورڈز نے 25جولائی کو میٹرک سالانہ امتحان 2015ء کے پوزیشن ہولڈر کے نتائج کا اعلان کیاتواعلیٰ پوزیشن حاصل کرنے والے طلبہ وطالبات کی خوشی کا کوئی ٹھکانہ نہ تھا ، لاہور میں طالبات نے پہلی، دوسری اور تیسری پوزیشنیں حاصل کیں جبکہ ایک طالب علم نے بھی تیسری پوزیشن حاصل کی ہے۔
پوزیشن لینے والے زیادہ تر طلباء و طالبات کا تعلق صوبائی دارالحکومت سے ہے۔ تینوں پوزیشنیں حاصل کرنے والی طالبات کا تعلق ڈویڑنل پبلک گرلز ہائی سکول سے ہے۔ سائنس اور آرٹس گروپ میں بھی طالبات نے تمام پوزیشنیں حاصل کر لیں۔لاہور بورڈ میں ڈویڑنل پبلک سکول ماڈل ٹاون کی طالبہ شفق زاہد نے 1080نمبر لیکر بوڑد میں پہلی پوزیشن حاصل کی۔اسی سکولکی طالبہ علینہ محسن نے 1079نمبر لیکر دوسری پوزیشن اور ڈویڑنل پبلک سکول ماڈل ٹا?ن کی طالبہ ارہ عابد نے 1078نمبر، پاک گریڑن ہائی سکول ننکانہ صاحب کی طالبہ عائشہ نور نے 1078نمبر اور گورنمنٹ سنٹرل ماڈل سکول لوئر مال کے طالبعلم محمد امتنان فضل نے 1078نمبر لیکرتیسری پوزیشن حاصل کر کی۔
سائنس گروپ (بوائز) میں گورنمنٹ سینٹرل ماڈل ہائی سکول لوئر مال لاہور کے محمد امتنان فضل نے پہلی پوزیشن، دی اسلامک پبلک ہائی سکول فار بوائزگرین ٹاوٴن لاہور محمد حنزلہ یونس طور نے دوسری پوزیشن،گورنمنٹ سینٹرل ماڈل ہائی سکول لور مال لاہور کے طلحہ بن اسد نے تیسری پوزیشن حاصل کی، پرائیویٹ طالبعلم محمد عاصم نے پہلی، اسلامیہ ماڈل ہائی سکول فار بوائزحبیب پارک ملتان روڈ لاہور حبیب اللہ ابراہیم نے دوسری پوزیشن، پرائیویٹ طالبعلم محمد عاصم نے تیسری پوزیشن حاصل کی ،آرٹس گروپ گرلز میں فاروقی گرلز ہائی سکول راوی روڈ لاہور کی طالبہ رمشہ نے پہلی پوزیشن،سوسائٹی پبلک گرلز ہائی سکول مغلپورہ کی افشاں شاہ دین نے دوسری پوزیشن، فاروقی گرلز ہائی سکول راوی روڈ لاہور کی آمنہ فاروق نے تیسری پوزیشن حاصل کر لیں۔
گوجرانوالہ میں پہلی چار میں سے تین پوزیشنیں لڑکوں نے حاصل کیں ہیں، بہاولپور میں حاجرہ خالد اور زوہا تنویر نے مشترکہ طور پر 1067نمبر حاصل کرکے مجموعی طور پر پہلی پوزیشن حاصل کی ہے جبکہ محمد سعد خان نے 1063نمبر لے کر دوسری اور طالب علم محمد ارحم اور طالبہ سعیدہ یونس نے مشترکہ طور پر 1061نمبر لیکر تیسری پوزیشن حاصل کی ہے۔ ساہیوال میں پہلی پوزیشن اسد مسعود شاہ نے کل 1100میں سے 1073نمبر حاصل کر کے حاصل کی۔
دوسری پوزیشن پر آنے والے محمد عمیر یٰسین نے 1072نمبر، تیسری پوزیشن پر آنیوالے فریاد علی نے 1070 نمبر حاصل کئے۔ راولپنڈی کے بورڈ میں مجموعی طور پرطالبات نے ٹاپ کیا ‘ پہلی دو پوزیشنیں نور فاطمہ اور سیدہ عائشہ فہد بخاری نے جبکہ تیسری پوزیشن کیڈٹ کالج کے طالبعلم طلحہ عبداللہ نے حاصل کی۔ نور فاطمہ نے 1072نمبر، عائشہ فہد بخاری نے 1066نمبرجبکہ عبداللہ نے 1064نمبر حاصل کئے۔گزشتہ دنوں لاہور بورڈ کے زیراہتمام میٹرک کے امتحان میں نمایاں پوزیشن حاصل کرنے والے طلبا و طالبات کے اعزاز میں الحمراء ہال میں خصوصی تقریب کا اہتمام کیا گیا صوبائی وزیر خوراک بلال یاسین تقریب کے مہمان خصوصی تھے،اس موقع پر پوزیشن ہولڈرز طلباء و طالبات میں میڈلز،اور سرٹیفکیٹس تقسیم کئے گئے۔
تاریخ اشاعت: 2015-08-06

(0) ووٹ وصول ہوئے